وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز نے کابینہ ممبرا ن پر بجلیاں گرا دیں، سخت فیصلہ

لاہور (نیوزڈیسک) وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز نے کابینہ ممبران کا پٹرول الاؤنس مکمل ختم کرنے کا فیصلہ کرلیا، انہوں نے کہا کہ سرکاری اخراجات میں بچت کا آغاز خود سے کریں گے، وزیراعلیٰ اورصوبائی کابینہ کے ارکان سرکاری پٹرول نہیں لیں گے، سرکاری محکموں کے تیل میں بھی کٹوتی کی جائے گی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیراعلیٰ حمزہ شہباز کی زیرصدارت اعلیٰ سطح کا اجلاس ہوا، اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ بچت کا آغاز خود سے کریں گے،

وزیراعلیٰ اورصوبائی کابینہ کے ارکان سرکاری پٹرول نہیں لیں گے، تمام صوبائی محکموں کے پٹرول اخراجات کی تفصیلات بھی طلب کرلی گئیں، وزیراعلیٰ پنجاب نے کابینہ پٹرول الاؤنس مکمل ختم کرنے کا فیصلہ کیا ہے، حکومتی سطح پر بچت، کھاد کی فراہمی اور دیگر اشیاء ضروریہ کے نرخ کے حوالے سے فیصلے کیے گئے۔اجلاس میں فیصلہ کیا گیا وفاقی حکومت کو چینی کی ایکسپورٹ کی اجازت نہ دینے کی تجویز پیش کی جائے گی۔

وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز نے کہا کہ عوام کو معاشی ریلیف دینے کے لئے ہرممکن اقدام کیے جائیں گے، ضرورت مند طبقے کو اشیا ضروریہ میں سبسڈی کیلئے تاریخی اقدامات کر رہے ہیں۔ کھاد کی ذخیرہ اندوزی کاشتکار پر ظلم کے مترادف ہے، ذخیرہ اندوزی کرنے والوں کیخلاف کریک ڈاؤن مزید تیز کیا جائے گا۔واضح رہے وزیراعظم شہبازشریف نے گزشتہ روز ملک میں معاشی ایمرجنسی لگانے کا فیصلہ کیا، وزیراعظم شہبازشریف نے کہا کہ کفایت شعاری اور سادگی کا آغاز وزراء اور بطور وزیراعظم مجھ سے کیا جائے گا، اشرافیہ اور امیر طبقات سادگی اختیار اور وسائل کے ساتھ غریب عوام کیلئے آگے بڑھ کر قربانی دیں،کل میٹنگ میں سیاستدان ، سیکرٹریز، افسران کیلئے سرکاری اخراجات میں جائز کٹوتی کی جائے گی۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں