اسلام آباد میں انسانی سمگلنگ کا دھندہ نہ رک سکا

اسلام آباد(کرائم رپورٹر)اسلام آباد میں انسانی سمگلنگ کا دھندہ نہ رک سکا۔وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) نے انتہائی مطلوب انسانی سمگلرز کی لسٹیں تیار کر لیںجس میں112ملزمان شامل ہیں۔ بیرون ممالک بیٹھ کر انسانی سمگلنگ کا مکروہ نیٹ ورک آپریٹ کرنے والے نو ملزمان بھی لسٹ میں شامل ہیں۔ لسٹ میں شامل 81ملزمان کو پاکستان میں موجودگی کے باوجود ایف آئی اے گرفتار نہ کرسکی۔

دستاویزات کے مطابق مطلوب انسانی سمگلرز کی لسٹ میں راولپنڈی 18،لاہور 17ملزمان کے ساتھ ٹاپ پر ،لاہور سرکل کو بیس مقدمات میں مطلوب واپڈا ٹاؤن کا رہائشی ملزم آزاد خان بھی لسٹ میں شامل ہے۔ فیصل آباد سرکل کو چار ملزمان مطلوب،6مقدمات میں پیپلز کالونی ون کا رہائشی محمد افضل صادق بھی شامل ہیں۔ گجرانوالہ سرکل کو 14ملزمان مطلوب،8مقدمات میں پھالیہ کا رہائشی ہارون منیر عرف راجہ گرفت میں نہ آسکا ۔ملتان سرکل کو مطلوب پانچ ملزمان میں رحیم یار خان کا رہائشی محمد مختار نو مقدمات میں گرفتار نہ ہو سکا ۔

اسلام آباد سرکل کو دس ملزمان کی تلاش ہے،رفعت ماہا نامی خاتون 12 مقدمات میں عدم گرفتاری کے ساتھ ٹاپ پرراولپنڈی سرکل کو 18ملزمان کی تلاش ہے،کوہاٹ کا رہاشی ذیشان طارق دس مقدمات کے ساتھ سرفہرست ملزم ذیشان طارق نے کمرشل مارکیٹ راولپنڈی میں بہشت انٹرپرائزز کا اٹارنی ہولڈر ہے۔ کراچی سرکل کو گیارہ انتہائی مطلوب ملزمان کی تلاش ہے،6مقدمات میں مطلوب ملزم محمد مظہر اقبال بھی شامل ہیں۔بیرون ممالک سے آپریٹ کرنے والے انسانی سمگلرز میں سے لاہور،کراچی سرکل کو چارچار،گجرانوالہ کو ایک ملزم مطلوب ہیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اسلام آباد میں انسانی سمگلنگ کا دھندہ نہ رک سکا” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں