اوورسیز پاکستانیوں کے ووٹنگ رائٹس ختم  کرنے پر تحفظات

اسلام آباد : انٹرنیشنل پروفیشنل کونسل کے چیئرمین سید علی امجد نے حکومت کو خبردارکرتے ہوئے کہا ہے کہ بیرون ممالک میں مقیم پاکستانیوں کے ووٹنگ حقوق ختم کرنے کے معاملے پر سخت تحفظات ہیں، اگر انہیں انکے بنیادی ووٹنگ کے حق سے محروم کیا گیا تو وہ ملک میں زرمبادلہ بھیجنا بند کر دینگے۔اورسیز پاکستانیوں کا پاکستان کی معیشت میں اہم کردار ہے،ڈرائینگ روم میں بیٹھ کر اورسیز پاکستانیوں کو بیوقوف نہیں بنایا جا سکتا۔

 نیشنل پریس کلب اسلام آباد میں انٹرنیشنل پروفیشنل کونسل کے چیئرمین سید علی امجد  نےاپنے دیگر ساتھیوں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ اوورسیز پاکستانیز غیر سیاسی لوگ ہے جن کی وابستگی صرف پاکستان کیساتھ ہے بیرون ممالک مقیم پاکستانیوں کو ان کا نمائندہ منتخب کرنے کا حق ملنا چاہئیے،بیرون ممالک میں مقیم پاکستانیوں کے ووٹنگ رائٹس ختم کرنے کے معاملے پر سخت تحفظات ہیں۔ بیرون ممالک میں مقیم پاکستانیوں کی اہمیت کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا اوورسیز پاکستانیز محنت کرکے پاکستان میں پیسہ بھجواتے ہیں پاکستان میں ہماری پراپرٹیز پر قبضہ کروا دیا جاتا ہے، عمران خان کی حکومت کے دور میں اوورسیز پاکستانیوں کو ووٹنگ رائٹس دینے کی کوشش کی گئی ووٹ دینے کا حق ہم سے کوئی نہیں چھین سکتا ہے پاکستان میں سیاسی صورتحال غیر یقینی کا شکار ہے امید ہے موجودہ حکومت اوورسیز پاکستانیوں کے ووٹنگ رائٹ کو ختم نہیں کرے گی ،سیاسی کوئی اقدام اٹھایا گیا تو اسکے سخت منفی اثرات سامنے آئینگے ،ہم دنیا میں پاکستان کا چہرہ ہےایک کروڑ پاکستانیوں کو ووٹ دینے کے حق اے محروم کیا گیا تو ترسیلات زر نہیں بھیجیں گے۔

سیدعلی امجد نے کہا کہ  انٹرنیشنل پروفیشنل کونسل پاکستان کے بزنس مین کو یوکے میں ایک پلیٹ فارم پر اکھٹے کرنے کا کام کرتی ہے یہاں سے جو ایم این ایز  جاتے ہیں انکو ہم ویلکم کرتے ہیں ہمارا کیسی سیاسی جماعت سے کوئی تعلق نہیں یو کے میں چار ایم پی اے ہیں جو ہمارے پلیٹ فارم سے ایم پی اے منتخب ہوئے، اوورسیز پاکستانیز روزگار کیلئے پاکستان چھوڑ کر گئے ہیں پاکستان میں اوورسیز پاکستانیوں کی پراپرٹیوں پر قبضہ کیا ہوا ہے اور ہمیں کوئی سپورٹ نہیں کرتا عمران خان کی حکومت کے ساتھ ہماری بہت سی میٹنگز ہوئی جس کے بعد انہوں نے یقین دلایا کہ وہ ہمیں ڈیجیٹل  ووٹنگ کا حق دلوائے گے جب ہم پاکستان آتے ہیں تو ہمارا ایک ہی مطالبہ ہوتا ہے کہ ہمیں تحفظ  دیا جائے ہم سب جانتے ہیں کہ کیس کو کیس چینل سے کیتنا فنڈ آتا ہے اور کیس ذریعے سے آتا ہے لوگ یہاں بیٹھ کر اوورسیز پاکستانیوں کو بیوقوف نہیں بنا سکتااس وقت جو لوگ حکومت کررہے ہیں انکو بتانا چاہتے ہیں  کہ وہ ہمارا بنیادی  حق ہم سے نہ چھینے جس دن ہمارا حق ہم سے چھینے گے ہم پاکستان میں انوسمنٹ کرنا چھوڑ دیں گے ریونیو بھیجنا بند کردیں گے ہم عمران خان کے ساتھ نہیں ہے بلکہ ہم ان لوگوں کے ساتھ ہیں جو پاکستان کی بھلائی چاہتے ہیں اوورسیز پاکستانیوں سے ڈیجٹل ووٹنگ کا حق چھیننے کی کوشش کی بھرپور  مذہمت کرتے ہیں۔اس موقع پر انٹرنیشنل پروفیشنل کونسل  کے ممبرخیام اکبر کا کہنا تھا کہ بہت سارے اوورسیز پاکستانیوں کی زمینوں پر قبضہ ہوگیا اور کچھ نہیں کرسکتے ایک کروڑ اوورسیز ہیں پاکستان میں انکے لیے کوئی قانون نہیںہے،اورسیز پاکستانی اپنے آپ کو پاکستان کے ساتھ منسلک رکھنا چاہتے ہیں تاہم چند ممالک میں مجبوری کی وجہ سے انہیں اپنی شہریت بتانا پڑتی ہے۔ہم پاکستان کو ایماندار اور بہترین قیادت دینا چاہتے ہیں۔جبکہ بیرون ممالک سیاسی اختلافات کی بنا پر ملک کی بدنامی کا باعث بننے والے عناصر کی پر زور مذمت کرتے ہیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اوورسیز پاکستانیوں کے ووٹنگ رائٹس ختم  کرنے پر تحفظات” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں